Freelancing

فری لانسرز رپورٹ 2020 – قارئین کے لئے اہم نقاط

فری لانسر اس فرد کو کہتے ہیں جو کسی ٹاسک کو کسی مخصوص وقت میں سر انجام دے اور اسکا معاوضہ وصول کرے۔ دنیا میں بہت سے فری لانسنگ کمپنیاں ہیں جہاں فری لانسرز کو خود کو رجسٹر کرتے ہیں۔ کام کروانے والے کسی فری لانسر کا پروفائل دیکھ کر اس کو کسی ٹاسک کے لئے ہائر کرتے ہیں۔
دنیا میں اس وقت Fiverr اور Upwork بڑے فری لانسنگ پلیٹ فارمز ہیں۔

گلوبل پے منٹ گیٹ وے Payoneer نے 2020 کی رپورٹ جاری کی ہے جس میں دنیا کے 150 ممالک کے فری لانسرز کا سروے کیا گیا ہے جس میں پاکستان بھی شامل ہے۔ اس رپورٹ کے چند اہم نقاط درج ذیل ہیں۔

1. سب سے زیادہ کمائ ویب ڈیزائینگ اور گرافکس ڈیزائننگ کے شعبوں سے تعلق رکھنے والے فری لانسرز نے کی۔ جبکہ دوسرے نمبر پر کمپیوٹر پروگرامنگ اور آئ ٹی کا شعبہ رہا۔

2. فری لانسرز کی کمائ میں تعلیم کا کردار کم رہا۔ ہائ سکول کی تعلیم والے فری لانسرز نے یونیورسٹی ڈگری ہولڈرز سے زیادہ پیسے کمائے۔ کیونکہ فری لانسرز کو انکے تجربے، کسٹمرز کے اچھے ریویوز اور مہارت کی بنیاد پر ہائر کیا گیا۔

3. اوسط فری گھنٹہ ریٹ 19 ڈالر سے بڑھ کر 21 ڈالر پر پہنچا۔ جو کہ اس اس لحاظ سے بھی حیران کن ہے کہ روزانہ کی بنیاد پر بڑی تعداد میں نئے فری لانسرز مارکیٹ میں داخل ہو رہے ہیں۔

4. خواتین فری لانسرز کی تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ مجموعی طور پر خواتین فری لانسرز نے مردوں سے 16 فی صد کم پیسے کمائے لیکن ویب ڈیزائننگ اور مارکیٹنگ ایسے شعبے رہے جن میں خواتین فری لانسرز نے مردوں سے زیادہ پیسے کمائے۔

مزید پڑھیں:   امریکی پابندی کے باوجود Huawei دنیا کا دوسرا بڑا موبائل برانڈ

5. ایسے فری لانسرز کی تعداد 70 فی صد رہی جن کی عمر 35 سال سے کم ہے لیکن 55 سال سے زیادہ عمر کے فری لانسرز کی کمائ اپنے نوجوان فری لا سرز کے مقابلے میں دگنی رہی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں